عمران خان نے گورنر خیبر پختونخوا کی تبدیلی کا مطالبہ کردیا

پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے گورنر پختونخوا اقبال ظفر جھگڑا کی تبدیلی کا مطالبہ کردیا۔

چیئرمین پی ٹی آئی نے مؤقف اختیار کیا ہے کہ گورنر پختونخوا ن لیگ کے سیکرٹری جنرل رہے ہیں، گورنر ابھی فاٹا کے حوالے سے مالی اختیارات اپنے پاس رکھے ہوئے ہیں، وہ خصوصاً فاٹا میں جانبدارانہ کردار کے حامل ہیں۔

عمران خان نے مزید کہا کہ ن لیگ اور پیپلز پارٹی کی لگائی گئی وفاقی و صوبائی بیوروکریسی کو بھی بدلا جائے، وفاق میں ن لیگ کی مقررکردہ بیوروکریسی تاحال تبدیل نہیں کی گئی، بیوروکریسی میں یہ جانبدار عناصر انتخابات کی شفافیت کیلئے بڑا خطرہ ہیں۔

انہوں نے کہا کہ سندھ اور پنجاب میں لگائی گئی بیوروکریسی انتخابات کے ماحول کو خراب کررہی ہے، نگران حکومتیں انتخابات کے انتظامات سے متعلق شدید سست روی کا شکار ہیں، عام انتخابات پر شکوک و شبہات کے سائے ہمیں کسی طور گوارا نہیں لہٰذا نگران وزیراعظم فوری مداخلت کریں۔

عمران خان نے مطالبہ کیا کہ نگران وزیراعظم انتخابات کے انعقاد کی راہ میں حائل نقائص دور کریں۔

کسی کی خواہش پر عہدہ کیوں چھوڑوں؟ گورنر پختونخوا

دوسری جانب گورنر خیبر پختونخوا اقبال ظفر جھگڑا نے اس حوالے سے اپنے مؤقف میں کہا ہے کہ ’عمران خان کی طرف سے میری بطور گورنر تبدیلی کے مطالبے پر افسوس ہوا، کسی کی خواہش پرعہدہ کیوں چھوڑوں؟‘

انہوں نے کہا کہ ’مجھے آئینی عہدہ سونپا گیا ہے، جوبھی کیا آئین کے مطابق کیا، آئندہ بھی جو کروں گا آئین کے مطابق ہی کروں گا۔

گورنرخیبرپختونخوا نے کہا کہ اگرکوئی اعتراض تھا توعمران خان مجھ سے براہ راست بات کرلیتے، کسی کے کہنے پرعہدہ نہیں چھوڑوں گا۔

Comments
Loading...