Official Web

پاکستان میں آج پہلی مرتبہ مریض کو مصنوعی دل لگایا جائے گا

کراچی: ملکی تاریخ میں شعبہ طب آج ایک اہم سنگ میل عبورکرے گا، پاکستان میں پہلی مرتبہ مریض کومصنوعی دل (مکینکل ہارٹ) لگایا جائے گا۔

ہارٹ ٹرانسپلانٹیشن کرنے والی ڈاکٹروں کی ٹیم کی سربراہی معروف ہارٹ ٹرانسپلانٹیشن ڈاکٹر پرویز چوہدری کریں گے جبکہ ٹیم میں امریکی ڈاکٹرز بھی شامل ہیں ، اس آپریشن میں تقریباً 5 گھنٹے درکار ہوتے ہیں۔62سالہ نفیسہ میمن پہلی مریض ہونگی جنھیں یہ مکینیکل دل لگایا جارہا ہے، نفیسہ میمن کا دل صرف 15 فیصد کام کررہا ہے۔ آپریشن صبح ساڑھے 8 بجے ہوگا۔

واضح رہے کہ یہ دل ایسے مریضوں کو لگایا جاتا ہے جن کا دل ناکارہ یا کمزور ہوجائے ، مکینکل دل left vertical assist device کہلاتا ہے ، اس کے ذریعے متاثرہ مریض کی جان بچائی جاسکتی ہے۔

یہ ڈیوائس لگنے کے بعد مریض ایک نارمل زندگی گزارنے کے قابل ہوجاتا ہے۔ یہ تکنیک پاکستان میں پہلی مرتبہ متعارف کرائی جارہی ہے ، نئی تکنیک کے دنیا بھر میں حوصلہ افزا نتائج سامنے آرہے ہیں جس کے بعد ہی اسے پاکستان میں بھی متعارف کرانے کا فیصلہ کیا گیا۔

اس حوالے سے قومی ادارہ برائے امراض قلب کے سربراہ پروفیسر ندیم قمراور ڈاکٹر حمید اللہ ملک آج (پیر کو) صبح 11 بجے پریس کانفرنس کے ذریعے اس تکنیک اور آپریشن کی تفصیلات سے بھی آگاہ کریں گے۔

یاد رہے کہ یہ مصنوعی دل لگانے کیلیے پہلے پاکستانی قومی ہاکی ٹیم کے معروف کھلاڑی اور مایہ ناز گول کیپر منصور احمد کا انتخاب کیا گیا تھا لیکن وہ مکینیکل دل لگائے جانے سے قبل ہی انتقال کرگئے۔

Comments
Loading...