الیکشن کے عمل کو متنازع بنایا گیا تو ملک کو ناقابل تلافی نقصان ہوگا، شہباز شریف

کوئٹہ: پاکستان مسلم لیگ (ن)  کے صدر شہباز شریف کا کہنا ہے کہ الیکشن کے عمل کو متنازع بنایا گیا تو ملک کو ناقابل تلافی نقصان ہوگا۔

شہباز شریف سانحہ مستونگ کے شہداء کے لواحقین سے تعزیت کے لیے کوئٹہ پہنچے جہاں انہوں نے نواب اسلم رئیسانی اور نواب زادہ لشکری رئیسانی سے ان کے چھوٹے بھائی سراج رئیسانی کی شہادت پر افسوس کا اظہار کیا۔

اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے شہباز شریف کا کہنا تھا کہ مستونگ واقعہ انتہائی افسوسناک ہے جس پر پورا پاکستان سوگوار ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ مستونگ واقعے میں ملوث عناصر کو قرار واقعی سزا دی جائے۔

انہوں نے کہا کہ میرا کوئٹہ آنے کا مقصد رئیسانی خاندان  سے اظہار یکجہتی کرنا ہے اور نوابزادہ لشکری رئیسانی کی سچائی کمیشن کے قیام پر اتفاق کرتا ہوں۔

ایک سوال کے جواب میں شہباز شریف کا کہنا تھا کہ عمران خان کو ایسے موقع پر جب ہر آنکھ اشکبار ہے تو غیر سنجیدہ بات اور سیاست نہیں کرنا چاہئے بلکہ ان کو اپنے گریبان میں جھانکنا چاہیئے۔

ان کا کہنا تھا کہ ملک میں ایک سیاسی جماعت کو سیاسی سرگرمیوں کی اجازت ہے اور باقی سب جماعتوں کو مشکل کاسامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

شہباز شریف کا کہنا تھا کہ ملک کے تمام مسائل کا حل صاف اور شفاف انتخابات میں ہے تاہم الیکشن کے عمل کو متنازع بنایا گیا تو ملک کو ناقابل تلافی نقصان ہوگا۔

صدر مسلم لیگ (ن) کا کہنا ہے کہ ملک بھر میں دہشت گردی کے باعث سیاسی سرگرمیاں محدود ہوگئی ہیں اور ہم سب کو اس صورتحال پر مشترکہ پالیسی اختیار کرنے کی ضرورت ہے۔

بعد ازاں وہ سانحہ مستونگ کے زخمیوں کی عیادت کے لیے سی ایم ایچ کوئٹہ پہنچے جہاں انہوں نے زخمیوں کی عیادت کی اور ان کی جلد صحتیابی کے لیے دعا کی۔

مسلم لیگ (ن) کا انتخابی سرگرمیاں معطل کرنے کا اعلان

دوسری جانب نگران وفاقی حکومت کی جانب سے ملک میں یوم سوگ منایا جارہا ہے اور اسی وجہ سے سرکاری عمارتوں پر قومی پرچم سرنگوں ہے۔

پاکستان پیپلزپارٹی کے بعد مسلم لیگ (ن) نے بھی سانحہ مستونگ کے سوگ میں انتخابی سرگرمیاں معطل کردی ہیں۔

صدر مسلم لیگ (ن) شہباز شریف نے ٹوئٹر پر اپنے بیان میں کہا کہ سانحہ مستونگ پر قومی سوگ کے موقع پر مسلم لیگ نے ایک روز کے لیے انتخابی سرگرمیاں معطل کردی ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ الیکشن کے انعقاد میں 10 روز رہ گئے ہیں اور اس سے قبل انتخابی سرگرمیوں کو نشانہ بنانا تشویشناک ہے جب کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان، نگران حکومت اور سیکیورٹی فورسز امیدواروں اور سیاسی میٹنگز کو فول پروف سیکیورٹی دینے کے ذمہ دار ہیں۔

شہباز شریف کا کہنا تھا کہ پاکستان کا مستقبل شفاف، آزادانہ اور پر امن انتخابات سے جڑا ہے۔

دوسری جانب شہباز شریف سانحہ مستونگ کے شہداء کے اہلخانہ سے تعزیت کے لیے کوئٹہ روانہ پہنچ گئے ہیں جہاں وہ سراج رئیسانی کے اہلخانہ سے ملاقات کریں گے۔

یاد رہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے گزشتہ روز صوابی میں ہونے والے جلسہ عام میں انتخابی سرگرمیاں نہ روکنے کا اعلان کیا تھا۔

واضح رہے کہ گزشتہ دنوں مستونگ میں بلوچستان عوامی پارٹی کے امیدوار سراج رئیسانی کی کارنر میٹنگ میں خودکش دھماکا ہوا تھا جس میں سراج رئیسانی سمیت 131 افراد شہید اور 120 سے زائد زخمی ہوئے تھے۔

Comments
Loading...