گودام پر چھاپہ؛ کسٹمز نے اسمگل شدہ سوا کروڑ کی چھالیہ برآمد کرلی

راچی: 

 پاکستان کسٹمز نے بڑی کارروائی میں اسمگل شدہ 23 ٹن چھالیہ کا ذخیرہ برآمد کرلیا.

 

کلکٹرکسٹمز پریونٹیو ڈاکٹر افتخار احمد نے جمعہ کے روز کسٹمز ہاؤس میں ایڈیشنل کلکٹر عامر تھیم اور ڈپٹی کلکٹر اے ایس او محمد فیصل خان کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بتایا کہ پکڑی گئی چھالیہ کی مالیت ایک  کروڑ10 لاکھ روپے ہے اور اسمگل شدہ چھالیہ کے اس ذخیرے کو جس بے نامی گودام میں رکھا گیا تھا، اس کی ریکی ڈی سی اے ایس او محمد فیصل نے کی اور بعدازاں اس کے اے ایس او ٹیم نے بے نامی گودام پر چھاپہ مارا تو اس بات کا انکشاف ہوا کہ تارکول کے ڈرموں میں اسمگل شدہ چھالیہ چھپائی گئی ہے، کسٹمز اے ایس او حکام نے چھالیہ کے مالک شیخ عامر کو گرفتار کرکے مقدمہ درج کرلیاہے۔

ڈاکٹر افتخار نے بتایا کہ پاکستان کسٹمزاے ایس او نے اپنی خفیہ نیٹ ورک کے ذریعے چھالیہ سیگریٹ شراب منشیات سمیت 9 ممنوعہ اشیا  کی بے نامی گوداموں کو تلاش کرلیا ہے یہ گودام بولٹن مارکیٹ سپرہائی وے ماڑی پور اور سٹی اسٹیشن کے علاقوں میں قائم ہیں جہاں ان 9 ممنوعہ اشیا کی ڈمپنگ ہوتی ہے۔

انھوں نے بتایا کہ رواں مالی سال میں کسٹمز پریونٹیوکراچی نے300 فیصد کے اضافے سے 4 ارب60  کروڑ روپے کی ممنوعہ اشیا ضبط کیں، زیرتبصرہ مدت میں کسٹمز اے ایس او نے میری ٹائم سیکورٹی ایجنسی کے اشتراک سے بھی گہرے سمندروں میں انسداد اسمگلنگ کی مختلف کامیاب کاروائیاں کرتے ہوئے 21040 شراب کی بوتلیں 54000 کینز اور 5 ٹن چرس بازیاب کرکے ضبط کیں، رواں  مالی سال میں 10 لاکھ 64 ہزار ایرانی ڈیزل، ممنوعہ ایسٹک ہائیڈرائیڈ سمیت 8563 کلوگرام منشیات، 79572 شراب کی بوتلیں، 65000 موبائل فونز اور متفرق ممنوعہ اشیا ضبط کیں اسی طرح ڈپلومیٹک گڈز کی آڑ میں بھی موبائل فونز چھالیہ اور مس ڈکلیئرڈ اشیا کو بھی ضبط کیا گیا۔

ڈپٹی کلکٹر کسٹمز اے ایس او محمد فیصل خان نے بتایاکہ چھالیہ کی درآمدات کو ہیلتھ سرٹیفکیٹس سے مشروط کیے جانے کے بعد یہ اسمگلروں کے لیے انتہائی پرکشش آئٹم بن گیا ہے لیکن کسٹمز اے ایس او نے اپنے خفیہ نیٹ ورک کی بدولت چھالیہ کے اسنگلرز اور زخیرہ اندوزوں کے خلاف گھیرا تنگ کردیا ہے یہی وجہ ہے کہ گزشتہ مالی سال کی دوسری ششماہی میں اے ایس او نے 7 مختلف کارروائیاں کر کے بھاری مقدار میں اسمگل شدہ بازیاب کرکے ضبط کیں۔

Comments
Loading...