نئے جمہوری دور کا آغاز، عمران خان قومی اسمبلی پہنچ گئے

اسلام آباد : پاکستان کی پارلیمانی تاریخ کی 15 ویں قومی اسمبلی کا افتتاحی اجلاس کچھ دیر میں شروع ہوگا، سپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق نو منتخب ارکان سے حلف لیں گے، نامزد وزیراعظم عمران خان بھی پارلیمنٹ ہاؤس پہنچ گئے۔

چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو، سابق وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف، سابق وزیراعلیٰ کے پی کے پرویز خٹک، اسد قیصر، حماد اظہر، شخ خرم شہزاد، فرخ حبیب، ناز بلوچ، زرتاج گل، فیصل واوڈا، علی زیدی، شاہ زین بگٹی پہلی بار قومی اسمبلی کا حصہ ہوں گے۔ سابق وزیراعظم نواز شریف، شاہد خاقان عباسی، چودھری نثار، خواجہ سعد رفیق، عابد شیر علی، طلال چودھری، دانیال عزیز، مولانا فضل الرحمان، محمود اچکزئی، آفتاب شیرپاؤ قومی اسمبلی کا حصہ نہ بن سکے۔

قومی اسمبلی سیکرٹریٹ نے نومنتخب ارکان کی حلف برداری اورسپیکر و ڈپٹی سپیکر کے انتخاب کا شیڈول جاری کر دیا، نومنتخب ار کان حلف لینے کے بعد فردا فردا سپیکر کی دعوت پر حروف تہجی کے اعتبار سے رول آف ممبرز پر دستخط کریں گے، سپیکر اور ڈپٹی سپیکر کے انتخاب کے لئے کاغذات نامزدگی کل دن 12 بجے تک سیکرٹری قومی اسمبلی کے دفتر میں جمع کرائے جا سکیں گے، انتخاب 15 اگست کو ہو گا جس کے بعد وزیر اعظم کے انتخاب کا شیڈول جاری کیا جائے گا، نومنتخب ارکان کی اجلاس میں شر کت، حلف برداری، سپیکر، ڈپٹی سپیکر اور وزیر اعظم کے انتخاب میں ووٹ ڈالنے کے لئے قومی اسمبلی سیکرٹریٹ کی طرف سے جاری کیا جانے والا کارڈ لازمی ہو گا۔

نومنتخب ارکان کے کوائف اکٹھا کرنے اور کارڈ کے اجرا کیلئے قومی اسمبلی کے کمیٹی روم نمبر 2 میں خصوصی سہولت مرکز قائم کر دیا گیا، جو ہفتہ اور اتوار کو بھی کھلا رہا، اجلاس کے موقع پر سکیورٹی انتظامات یقینی بنانے اور گیلریوں میں بیٹھنے کی گنجائش میں کمی کے باعث ہر رکن کو مہمانوں کے لئے 2 گیلری کارڈ جاری کئے جائیں گے، قومی اسمبلی سیکرٹریٹ کی طرف سے ارکان سے درخواست کی گئی ہے کہ وہ ہر اجلاس سے ایک روز پہلے اپنے مہمانوں کے نام، شناختی کارڈ اور گاڑی نمبرفراہم کریں بصورت دیگر ان کو ریڈزون میں داخل نہیں ہونے دیا جائے گا۔

پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری سمیت کئی نئے چہرے پہلی مرتبہ اسمبلی میں حلف لیں گے، بلاول بھٹو کو زرداری ہاؤس سے جلوس کی شکل میں پارلیمنٹ ہاؤس لے جایاجائیگا، سابق صدر آصف زرداری بھی حلف اٹھائیں گے، بختاور اور آصفہ بھٹو بھی حلف برداری دیکھنے قومی اسمبلی آئیں گی، تحریک انصاف نے عمران خان کوقائدایوان کیلئے نامزد کیا ہے جبکہ حزب اختلاف نے مسلم لیگ ن کے صدر شہبازشریف کو مشترکہ امیدوار نامزد کیا ہے ، اپوزیشن جماعتوں نے پیپلز پارٹی کے رہنما اور سابق قائد حزب اختلاف خورشید شاہ جبکہ تحریک انصاف نے اسد قیصر کو سپیکر کے لئے نامزد کیا ،تحریک انصاف تا حال ڈپٹی سپیکر کے لئے امیدوار کا فیصلہ نہیں کر سکی جبکہ متحدہ اپوزیشن نے ڈپٹی سپیکر کے لئے مولانا فضل الرحمن کے بیٹے اسد محمود کے بیٹے کو نامزد کیا ہے۔

دوسری جانب سندھ اسمبلی کے 164 نومنتخب ارکان بھی آج حلف اٹھائیں گے ،جن میں پیپلزپارٹی 97 ، تحریک انصاف30 ، ایم کیوایم پاکستان 21، گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس 14 اور تحریک لبیک کے 3 ارکان شامل ہیں،پیپلزپارٹی نے مراد علی شاہ کو وزیراعلٰی، آغا سراج درانی کو سپیکر اور ریحانہ لغاری کو ڈپٹی سپیکر نامزد کیاہے جبکہ اپوزیشن جماعتوں نے وزیراعلٰی،سپیکر اور ڈپٹی سپیکر کے لئے مشترکہ امیدوار لانے کا فیصلہ کیا ہے ،اپوزیشن رہنماؤں نے کہا پیپلزپارٹی کے امیدواروں کو بلا مقابلہ منتخب نہیں ہونے دیں گے ،ذرائع کے مطابق اپوزیشن جماعتوں کی طرف سے ایم کیوایم پاکستان سے سپیکر اور جی ڈی اے سے ڈپٹی سپیکر کا امیدوار لئے جانے کا امکان ہے جبکہ وزیراعلٰی کیلئے مشترکہ امیدوار تحریک انصاف سے لایاجائے گا۔

خیبرپختونخوا اسمبلی کااجلاس بھی آج ہو گا ، نومنتخب ارکان کی حلف برداری کیلئے گورنر نے آئین کے آرٹیکل 53 اور127 کے تحت سردار اورنگزیب نلوٹھا کوپریذائیڈنگ افسرمقرر کر دیا، جو سپیکرکی غیرموجودگی میں نومنتخب ارکان سے حلف لیں گے ، نامزدسپیکراسدقیصر قومی اسمبلی کے اجلاس میں شرکت کریں گے۔

بلوچستان اسمبلی کا اجلاس سپیکر راحیلہ درانی کی صدارت میں آج ہوگا، 65 کے ایوان میں 62 نو منتخب ارکان حلف لیں گے ،پی بی 35 مستونگ میں خودکش حملے میں نوبزادہ میر سراج رئیسانی کی شہادت کے بعد انتخابات ملتوی کر دیئے گئے تھے، پی بی 41 سے ایم ایم اے کے امیدوار زاہد علی ریکی کا نتیجہ روک لیا گیا جبکہ پی بی 26 ایچ ڈی پی کے امیدوار احمد علی کا کیس محکمہ داخلہ کے پاس ہے ، حلف برداری کے بعد اجلاس شام 4 بجے تک ملتوی کر دیا جائے گا، شام کو سپیکر اور ڈپٹی سپیکر کا انتخاب ہوگا، نئے سپیکر سے حلف لینے کے بعد موجودہ سپیکر راحیلہ درانی کرسی نئے سپیکر کے حوالے کریں گی جس کے بعد نئے سپیکر کی نگرانی میں ڈپٹی سپیکر کا انتخاب ہوگا، اجلاس کی تیاریاں مکمل کرلی گئی ،سکیورٹی کے سخت حفاظتی اقدامات کئے گئے ہیں۔

Comments
Loading...