حکومت کاجماعت الدعوة ،فلاح انسانیت فاو¿نڈیشن کے اثاثے ضبط کرنےکا حکم

 

وزارت داخلہ نے حافظ سعید کے دونوں اداروں کے اثاثے سرکاری تحویل میں لینے کی منظوری دےدی

پنجاب حکومت نے جماعت الدعوة کے زیر انتظام مدارس اور صحت کے مراکز کا کنٹرول اپنے ہاتھ میں لے لیا

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) وزارت داخلہ نے جماعت الدعوة اور فلاح انسانیت فاو¿نڈیشن کے اثاثے ضبط کرنے کی منظوری دے دی ہے۔ اقوام متحدہ کی کمیٹی کے اجلاس سے پہلے پاکستان کا بڑا فیصلہ سامنے آیاہے۔ وزارت داخلہ نے جماعت الدعوہ اور فلاح انسانیت فاو¿نڈیشن کے اثاثے ضبط کرنے کی منظوری دے دی ہے۔وزارت داخلہ نے حافظ سعید کے دونوں اداروں کے اثاثے سرکاری تحویل میں لینے کی منظوری دی ہے۔اس حوالے سے وفاقی حکومت نے صوبائی حکومتوں کو کارروائی کے احکامات جاری کردیئے ہیں۔ پاکستان نے عالمی کمیٹی کو اپنے اقدامات سے تحریری طورپرآگاہ کردیاہے۔واضح رہے کہ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کا اجلاس 18 فروری کو پیریس میں ہورہا ہے۔ حکومت پنجاب نے راولپنڈی میں جماعت الدعوة کے زیر انتظام مدارس اور صحت کے مراکز کا کنٹرول اپنے ہاتھ میں لینے کی مہم کا آغاز کردیا۔میڈیا رپورٹ کے مطابق مہم کے دوران حکومت پنجاب نے راولپنڈی کے چکرا روڈ پر واقع مدرسہ حدیبیہ کا کنٹرول اپنے ہاتھ میں لے کر محکمہ اوقاف کو اس کے انتظامی امور کی ذمہ داری سونپ دی۔دوسری جانب ضلعی انتظامیہ نے بھی شہر میں موجود جماعت الدعوةکے فلاحی ادارے فلاح انسانیت فاو¿نڈیشن (ایف آئی ایف) کے زیر انتظام 4 صحت کے مراکز کا کنٹرول بھی اپنے ہاتھ میں لے لیا۔وفاقی حکومت نے کمپنیوں اور مخیر حضرات کو بھی جماعت الدعوة، ایف آئی ایف اور اقوامِ متحدہ کی سیکیورٹی کونسل (یو این ایس سی) کی جانب سے جاری کردہ کالعدم تنظیموں کی فہرست میں شامل جماعتوں کو چندہ دینے سے روک دیا۔خیال رہے کہ گزشتہ ماہ سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان (ایس ای سی پی) کی جانب سے تمام کمپنیز کو نوٹیفکیشن جاری کیا گیا تھا جس میں اقوامِ متحدہ کی جانب سے کالعدم قرار دی جانے والی تنظیموں کو چندہ دینے سے روک دیا تھا۔راولپنڈی کی ضلعی انتظامیہ کے ایک اعلیٰ حکام نے نجی ٹی وی سے بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ صوبائی حکومت کی جانب انہیں 4 مدارس کے نام مسوصول ہوئے جس کے بعد انتظامیہ نے ان مدارس کا دورہ کیا جس کے حوالے سے جماعت الدعوة نے تردید کی کہ جماعت کا ان مدارس کے ساتھ کوئی تعلق نہیں ہے۔انہوں نے بتایا کہ صوبائی حکومت کی جانب سے مدرسہ حدیبیہ کا کنٹرول اپنے ہاتھ میں لے لیا گیا ہے جو ایک اسکول، کالج اور مدرسے پر محیط ہے۔راولپنڈی کی ضلعی انتظامیہ کے حکام کا کہنا تھا کہ حکومت نے حدیبیہ مدرسے کی مالی امداد اور اس کے اخراجات کی جانچ کرنے کے لیے اس کا آڈٹ بھی شروع کردیا۔انہوں نے بتایا کہ صوبائی حکومت کی جانب سے ضلعی انتظامیہ کو حکم دیا گیا ہے کہ وہ مذکورہ مدرسے میں تعلیم حاصل کرنے والے طلبہ اور یہاں درس دینے والے اساتذہ کے تفصیلات سے آگاہ کریں۔ضلعی انتظامیہ کے حکام نے بتایا کہ حکومت نے اس کام کو انجام دینے کے لیے پولیس، محکمہ اوقاف اور ضلعی انتظامیہ کے افسران پر مشتمل ایک ٹیم بھی تشکیل دے دی۔انہوں نے بتایا کہ اسی طرح کی کارروائیوں کا آغاز صوبے کے دیگر اضلاع اٹک، چکوال اور جہلم میں بھی کیا جائے گا۔راولپنڈی کے ڈپٹی کمشنر طلعت محمود گوندل نے بات چیت کرتے ہوئے تصدیق کی کہ صوبائی حکومت نے جماعت الدعوة اور ایف آئی ایف کے زیرِ انتظام مدارس اور صحت کے مراکز کا کنٹرول اپنے ہاتھ میں لے لیا۔

Comments
Loading...