پاکستان کی مذمت کیسے کر سکتے ہیں جب کہ کوئی ثبوت ہی نہیں، سعودی وزیر خارجہ

ریاض: سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر نے بھارت کو کرارا جواب دیتے ہوئے کہا ہے کہ ہم کیسے پاکستان کی مزمت کریں جب دہشت گردی پر جب ایسا کوئی ثبوت ہے ہی نہی۔

انڈیا ٹوڈے کو دیئے گئے انٹریو میں انکا کہنا تھا کہ پاکستان کا کہنا ہے کہ وہ پلوامہ حملے میں ملوث نہیں ہے۔ دونوں ملکوں کو تناؤ کم کرنا ہو گا۔

واضح رہے کہ اس سے قبل سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے دورے کا مشترکہ اعلامیہ آتے ہی بھارت میں صف ماتم بچھ گئی۔ بھارتی انتہا پسندوں اور ان کے متعصب میڈیا نے واویلا مچانا شروع کر دیا ہے کہ سعودی عرب نے پاکستان کو اربوں ڈالر دیئے لیکن بھارت کو ایک ٹکا تک نہیں ملا۔ دوسری جانب بھارتی میڈیا نے پاکستان کا نام نہ لینے پر اپنے ہی وزیراعظم پر غداری کا الزام عائد کرنا شروع کر دیا ہے۔

دنیا نیوز ذرائع کے مطابق سعودی ولی عہد محمد سلمان اور بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے درمیان ملاقات کے بعد دونوں ممالک کا مشترکہ اعلامیہ جاری کر دیا گیا ہے جسے دیکھ کر بھارت میں پریشانی کی لہر دوڑ گئی ہے۔

ذرائع کے مطابق سعوی ولی عہد شہزاد محمد بن سلمان نے پاکستان کو نشانہ بنانے کی تمام بھارتی کوششوں کو ناکام بنا دیا ہے۔ کسی ایسی تنظیم کا نام مشترکہ اعلامیہ شامل ہی نہیں جس سے پاکستان پر الزام آئے۔ اس کے بعد بھارتی میڈیا نے اپنی ہی حکومت پر تنقید کرنا شروع کر دی ہے۔

Comments
Loading...