کینہ پرور بھارت کو پی ایس ایل کی کامیابی کھٹکنے لگی

ممبئی: کینہ پروربھارت کوپی ایس ایل کی کامیابی کھٹکنے لگی جب کہ  بی سی سی آئی کی جانب سے غیرملکی اسٹارز کو پاکستانی لیگ یا آئی پی ایل میں سے کسی ایک کے انتخاب کا آپشن دینے پر غور کیا گیا۔

بھارتی بورڈ اپنی حکومت کے نقش قدم پر چلتے ہوئے پاکستان کو انٹرنیشنل کرکٹ میں تنہا کرنے کے مختلف منصوبوں پر بدستور غور کرنے میں مصروف ہے، خاص طور پر اب اس کا نشانہ پی ایس ایل بنی ہوئی ہے، پہلے اس کے آفیشل براڈ کاسٹرکو معاہدے سے دستبردار ہونے پر مجبور کیا اور پھر غیرملکی کھلاڑیوں کو آئی پی ایل کے زور پر لیگ سے الگ کرنے کا گھٹیا ترین منصوبہ بھی تیار کیا۔

سپریم کورٹ کی مقرر کردہ کمیٹی آف ایڈمنسٹریٹرز کے ممبران ونود رائے، ڈیان ایڈلجی، لیفٹینینٹ جرنل روی ٹھوگے اور بورڈ کے چیف ایگزیکٹیو راہول جوہری نے غیرملکی پلیئرز کو یہ آپشن دینے پر غور کیا کہ وہ پی ایس ایل اور آئی پی ایل میں سے کسی ایک ایونٹ کا انتخاب کرلیں۔

اس طرح بلیک میلنگ کے ذریعے کھلاڑیوں کو پاکستانی لیگ سے دور کرنے کا منصوبہ تقریباً تیار کرلیا گیا، مگر آخری لمحات میں انھیں اس بات کا احساس ہواکہ اس طرح غیرملکی کرکٹ برادری میں اچھا پیغام نہیں جائیگا، اس لیے ایک اور یوٹرن لیتے ہوئے اس منصوبے سے بھی دستبرداری پر مجبور ہوگئے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل بھارت نے ورلڈ کپ میں پاکستان کے خلاف 16 جون کو شیڈول میچ کے بائیکاٹ کا بھی ذہن بنالیا تھا مگر 2 قیمتی پوائنٹس سے دستبرداری کے خوف سے یہ فیصلہ بھی واپس لے لیا، خفت مٹانے کیلیے ونود رائے نے یہ بیان بھی داغا کہ میچ کے بائیکاٹ سے ہم اپنے پاؤں میں گولی کیوں ماریں، ہم جنوبی افریقہ کی طرح پاکستان کو انٹرنیشنل کرکٹ سے باہر کرنے کی کوششیں جاری رکھیں گے۔

Comments
Loading...