اورنج لائن میٹرو ٹرین منصوبے کی کامیاب آزمائش

لاہور: (ویب ڈیسک) اورنج لائن میٹرو ٹرین منصوبہ تکمیل کے آخری مراحل میں داخل ہو چکا ہے۔ جس کے بعد ٹرین کو پہلی مرتبہ آزمائشی طور واڑہ گجراں میں ڈپو کے اندر ہی چلایا گیا۔

 اِس وقت تک سولہ ٹرینیں لاہور پہنچ چکی ہیں جبکہ سات ٹرینیں چند روز تک کراچی پہنچ جائیں گی۔ ایل ڈی اے حکام کے مطابق واڑہ گجراں سے پاکستان منٹ تک کا چھ اعشاریہ تین کلومیٹر کا ٹریک مکمل طور پر تیار ہوچکا ہے جبکہ منصوبے کے باقی حصوں پر تیزی سے کام جاری ہے۔

وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز شریف نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹویٹر پر لاہور اورنج ٹرین منصوبے کے آزمائشی مرحلے کی تصاویر شئیر کرتے ہوئے اورنج لائن میٹروٹرین کی کامیاب آزمائش پر اللہ کا شکر ادا کیا۔

یاد رہے کہ پاکستان کے شہر لاہور میں یہ منصوبہ چین کے تعاون سے تعمیر کیا جارہا ہے۔ اس منصوبے پر ایک ارب 60 کروڑ ڈالر لاگت آئے گی اور ٹرین کے روٹ کی لمبائی 27.1 کلومیٹر ہوگی۔ حکومتی اعداد و شمار کے مطابق اورنج لائن ٹرین 27 کلومیٹر کا فاصلہ 45 منٹ میں طے کرےگی، جبکہ اورنج ٹرین میں روزانہ ڈھائی لاکھ لوگ سفرکریں گے۔ وزیر اعلیٰ پنجاب کا کہنا ہے کہ اورنج لائن میٹرو ٹرین منصوبے کی تکمیل سے ٹرانسپورٹ کے شعبے میں انقلاب برپا ہو گا اور عوام کو باکفایت ، معیاری اور جدید سفری سہولیات میسر آئیگی۔

واضح رہے کہ اورنج لائن میٹرو ٹرین علی ٹاؤن، رائیونڈ روڈ سے شروع ہو کر براستہ ٹھوکر نیاز بیگ روڈ ، کینال ویو ، ہنجر وال ، وحدت روڈ ، چوپرجی ، لیک روڈ ، جی پی او، لکشمی چوک ، میکلورڈ روڈ، ریلوے سٹیشن ، سلطان پورہ ، یوای ٹی، باغبان پورہ، شالامار باغ ، پاکستان منٹ ، محمود بوٹی، سلامت پورہ ، اسلام پارک اور ڈیرہ گجرا ں نزد قائد اعظم انٹرچینج رنگ روڈ تک جائیگی۔ یہ پورا ٹریک شہر کے گنجان آباد اور مصروف کاروباری علاقوں سے گزرتا ہے

Comments
Loading...