امریکا نے افغانستان میں متوازی حکومت کی مخالفت کردی

امریکا نے افغانستان میں متوازی حکومت کے قیام کی مخالفت کردی۔

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے افغان صدر اشرف غنی کے حلف اٹھانے کے بعد ٹوئٹر پر جاری بیان میں کہا کہ امریکا ایک متحد اور خودمختار افغانستان کی حمایت کرتا ہے اور ملک میں متوازی حکومت کے قیام کے لیے کسی بھی کوشش کی مخالفت کرتا ہے۔

Secretary Pompeo

@SecPompeo

The U.S. strongly supports a unified and sovereign and opposes any effort to establish a parallel government or any use of force to resolve political differences. Prioritizing an inclusive government is paramount for peace.

1,465 people are talking about this

انہوں نے مزید کہا کہ امریکا سیاسی اختلافات کے حل کے لیے کسی بھی فورس کے استعمال کی بھی مخالفت کرتا ہے۔

امریکی وزیر خارجہ کے بیان کے بعد امریکی نمائندہ خصوصی برائے افغانستان زلمے خلیل زاد نے بھی ایک ٹوئٹ کی جس میں انہوں نے کہا کہ میں نے افغانستان میں ایک مکمل اور قابل قبول حکومت کی تشکیل کے لیے صدر اشرف غنی اور عبداللہ عبداللہ کو ایک معاہدے پر لانے کی کوششوں میں گزشتہ ہفتے یہاں قیام کیا، ہم اپنے تعاون کو جاری رکھیں گے۔

U.S. Special Representative Zalmay Khalilzad

@US4AfghanPeace

I spent much of the last week trying to help Pres @ashrafghani and Dr. @DrabdullahCE come to an agreement on an inclusive and broadly accepted government. We will continue to assist.

252 people are talking about this

انہوں نے کہا کہ صدر اشرف غنی اور عبداللہ عبداللہ کے بیان کے مطابق دونوں رہنماؤں نے واضح کیا کہ وہ ملک میں سیاسی بحران کے خاتمے کے لیے مذاکرات پر آمادہ ہیں اور ان کے نزدیک امن و مصالحت ترجیح ہے۔

دوسری جانب امریکی محکمہ خارجہ نے کابل میں دہشت گرد حملے کی مذمت کی اور ایک بیان میں کہا کہ امریکا افغانستان میں مکمل قیام امن کی کوششوں میں مصروف ہے۔

امریکی محکمہ خارجہ نے افغان صدر کے مذاکرات جاری رکھنے، افغان طالبان کی رہائی اور انٹرا افغان ڈائیلاگ کے لیے ٹیم تشکیل دینے کے اعلان کا خیر مقدم کیا۔

امریکی محکمہ خارجہ کا کہنا تھا کہ باشعور اور امن کے قیام کے خواہش مند افغان عوام کے لیے امریکا دونوں طرف سے معاہدے کی تکمیل کے لیے کام کررہا ہے اور اس مقصد کے حصول کے لیے تمام فریقین کو ساتھ لے کر چلنے کی کوششوں پر بھی ثابت قدم رہے گا۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز افغان صدر اشرف غنی اور عبداللہ عبداللہ نے نئی حکومت کے قیام کے لیے حلف اٹھایا اور متوازی حکومت بنانے کا اعلان کیا، اس موقع پر افغان صدر نے طالبان قیدیوں کی رہائی کے لیے حکم جاری کرنے کا بھی اعلان کیا۔

Comments
Loading...