صدر کی جامعات میں بلوچ طلباء کو ہراساں کرنے سے بچانے کیلئے اقدامات کی ہدایت

اسلام آباد: صدر عارف علوی نے ایچ ای سی کو جامعات میں بلوچ طلباء کو ہراساں کرنے اور نسلی پروفائلنگ سے بچانے کیلئے اقدامات کی ہدایت کردی۔

یہ ہدایات اسلام آباد ہائی کورٹ کے 8 اپریل کے حکم نامے کی تعمیل میں بلوچ طلباء کی شکایات سننے کے بعد جاری کی گئیں۔ جس میں عدالت نے بلوچ طلباء کے مسائل سننے ، نسلی پروفائلنگ کی تحقیقات کرنے اور رپورٹ پیش کرنے کا کہا تھا۔

صدر مملکت نے 20 اور 21 اپریل 2022 کو بلوچ طلباء کے ساتھ ملاقات کی تھی جس میں طلبا نے اپنے مسائل سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ یونیورسٹی کیمپس میں نامعلوم افراد کی جانب سے کچھ بلوچ طلباء سے تحقیق کی آڑ میں پوچھ گچھ کی جا رہی تھی ، پوچھ گچھ میں بلوچ طلباء سے مختلف تنظیموں میں شمولیت کے بارے میں سوالات کیے جا رہے تھے۔
صدر مملکت نے کہا کہ ایچ ای سی تمام وفاقی جامعات کے کیمپسز میں بلوچ طلباء کو ہراساں کرنے کے واقعات سے بچنے کیلئے ضروری ہدایات جاری کرے ، ملک کو ایک مختلف صورتحال کا سامنا ہے ، دہشت گردی کی کارروائیوں کا دوبارہ سر اٹھانا باعث تشویش ہے، انسداد دہشت گردی کی کاروائیاں انتہائی احتیاط اور توازن کے ساتھ انجام دی جانی چاہیے ، ہماری آبادی کے کسی بھی طبقے خصوصاً بلوچستان کے طلبہ کے خلاف امتیازی سلوک نہ کیا جائے۔

صدر مملکت نے کہا کہ جامعات بلوچ طلباء کیلئے باعث تشویش سرگرمیوں کی بھی مستعدی سے نگرانی کریں ، یونیورسٹی کے احاطے میں ہونے والی مجرمانہ سرگرمیوں کی تمام قانونی تقاضوں پر عمل کرتے ہوئے تحقیقات کی جائیں۔

Comments
Loading...