آئی سی سی کے 2 سینیئر افسران پاک ویسٹ انڈیز سیریز کی نگرانی کیلئے پاکستان آئیں گے

پاکستان اور ویسٹ انڈیز کی ٹی ٹوئنٹی سیریز کے لیے انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کے صدر ششانک منوہر اور چیف ایگزیکٹیو ڈیوڈ رچرڈسن کراچی نہیں آئیں گے تاہم آئی سی سی نے اپنے دو سینیئر افسران کو سیریز مانیٹر کرنے کے لئے پاکستان بھیجنے کا فیصلہ کیا ہے۔

اس سے قبل پاکستان سپر لیگ فائنل کو دیکھنے کے لئے انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ کے صدر جائیلز کلارک پاکستان آئے تھے۔

جائیلز کلارک نے کراچی میں 3 دن گزارے اور پاکستان کے انتظامات کی تعریف کی تھی۔ حددرجہ مصدقہ ذرائع کے مطابق آئی سی سی کے جنرل منیجر کرکٹ جیف ایلا ڈائس اور سنیئر منیجر امپائرز اور ریفریز ایڈرین گریفتھ پاکستان کرکٹ بورڈ کی دعوت پر کراچی آرہے ہیں۔

دونوں سینیئر افسران، آئی سی سی میچ ریفری ڈیوڈ بون کے ساتھ کراچی پہنچ رہے ہیں۔

قبل ازیں پاکستان کرکٹ بورڈ نے جائیلز کلارک کو مدعو کیا تھا جن کا شمار آئی سی سی بورڈ کے سینیئر اور با اثر شخصیات میں ہوتا ہے۔ مستقبل میں وہ ششانک منوہر کی جگہ آئی سی سی کی صدارت کے امیدوار بھی ہیں۔

جائیلز کلارک،آئی سی سی کی پاکستان ٹاسک ٹیم کے سربراہ تھے اور ان کی کوششوں سے گزشتہ سال ورلڈ الیون لاہور آئی تھی۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین نجم سیٹھی نے جیو کو بتایا کہ ویسٹ انڈیز کا شمار ٹیسٹ کھیلنے والے ملکوں کی صف اول کی ٹیموں میں ہوتا ہے اور اس کے دورے سے پاکستان کرکٹ کو بہت فائدہ ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ ویسٹ انڈیز کے دورہ پاکستان سے انٹرنیشنل کرکٹ کی بحالی میں مدد ملے گی۔

نجم سیٹھی نے دعویٰ کیا کہ پاکستان میں اب حالات تبدیل ہوچکے ہیں، پاکستان میں انٹر نیشنل کرکٹ بحال ہورہی ہے، جائیلز کلارک پاکستان کے بارے میں جو باتیں کرکے گئے ہیں اس سے پاکستان کرکٹ کو مستقبل میں فائدہ پہنچے گا۔

Comments
Loading...