عالمی واچ لسٹ میںپاکستان کا نام ڈالنا افسوسناک ،فیصلہ قربانیوں کی نفی ہوگا(خارجہ امور کمیٹی)

اقوام متحدہ نے تمام کالعدم تنظیموں پر پابندیاں لگانے کے بعد انکے فنڈز روکنے کےلئے تمام متعلقہ خفیہ اداروں کو ہدایات جاری کر دی
کمیٹی نے پاک فوج کے مزید دستے سعودی عرب بھجوانے کے معاملے پر وزیر دفاع اور وزیر خارجہ سے بریفنگ بھی مانگ لی
اسلام آباد( صدیق ساجد) قومی اسمبلی کی خارجہ امور کمیٹی کے جمعہ کو ہونے والے ان کیمرہ اجلاس میں انکشاف کیا گیا کہ اقوام متحدہ کی قرار داد 1267کے تحت تمام کالعدم تنظیموں پر پابندیاں لگانے کے بعد ان کے فنڈز جمع کرنے کے عمل کو روکنے کےلئے تمام متعلقہ خفیہ اداروں کو ہدایات جاری کر دی گئی ہیں اور انٹر ایجنسی ٹاسک فورس اس حوالے سے فعال ہو کر ایسی تنظیموں کےخلاف عمل پیرا ہے۔ایسی صورت میں فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کے آئندہ اجلاس میں پاکستان کا نام واچ لسٹ میں ممکنہ طور پر شامل ہونا انتہائی افسوسناک اور امریکہ کی طرف سے دہشت گردی کے خلاف پاکستان کی قربانیوں اور کردار کی نفی ہوگا۔کمیٹی نے پاک فوج کے مزید دستے سعودی عرب بھجوانے کے معاملے پر وزیر دفاع اور وزیر خارجہ سے بریفنگ بھی مانگ لی۔ ذرائع کے مطابق فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کے آئندہ اجلاس میں پاکستان کا نام واچ لسٹ میں ممکنہ طور پر شامل ہونے کے معاملے پر جمعہ کو پارلیمنٹ ہاﺅ س میں چیئرمین خسرو بختیارکی صدارت میں ہونے والے اجلاس میں تمام تر صورت حال کا جائزہ لیا گیا ذرائع کے مطابق اراکین کمیٹی کی اکثریت نے واچ لسٹ میں پاکستان کا نام آنے کو خارجہ پالیسی کی مکمل ناکامی قرار دیا اور اس حوالے سے سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ کی جانب سے دی جانے والی تمام وضاحتوں کو بھی مسترد کر دیا اور کہا کہ ہماری کمزوریوں کا فائدہ بھار ت اٹھا رہا ہے اس موقع پرسیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ نے واچ لسٹ میں پاکستان کو شامل نہ ہونے دینے کے لیئے کی گئی سفارتی کوششوں سے آگاہ کیا۔ مگر کمیٹی ان کے اقدامات سے مطمئن نہ ہوئی اور کمیٹی اراکین کا کہنا تھا کہ پاکستان کو پتہ ہی چند دن پہلے چلا اور امریکہ یہ قرار داد برطانیہ و دیگر ممالک کے ساتھ مل کر لا رہا ہے ایسے میں امریکہ کے ساتھ تعلقات کو از سر نو دیکھا جائے کیونکہ یہ پاکستان کے کردار اور قربانیوں کی مکمل طور پر نفی ہے چیئرمین قائمہ کمیٹی امور خارجہ خسرو بختیار نے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ کمیٹی نے واچ لسٹ میں آنے کی صورت میں پاکستانی معیشت پر ممکنہ اثرات پر بریفنگ مانگی ہے سیکرٹری خزانہ اور سیکرٹری داخلہ آئندہ اجلاس میں بریفنگ دیں گے۔ کیونکہ واچ لسٹ میں شامل ہوئے تو پاکستان میں کاروبار پر یقینا منفی اثرات پڑیں گے اور ہماری معیشت پر اثرات ضرور آئیں گے۔ ایل سی پراسس کا ٹائم بڑھے گا۔ دیگر مشکلات پیدا ہوں گی۔ ان کا کہنا تھا کہ بریفنگ میں سی پیک سمیت سرمایہ کاری پر ممکنہ اثرات کی رپورٹ مانگی ہے۔ پاکستان کو فنانشل ایکشن ٹاسک فورس کے نئے طریقہ کار پر اعتراض ہے۔ گرے ممالک کی فہرست میں پاکستان کو شامل کیا جانا جانبدارانہ اقدام ہو گا۔ پاکستان اپنی بین الاقوامی ذمہ داریوں پر عملدرآمد کر رہا ہے۔ پاکستان نے عملدرآمد رپورٹ چھ جنوری کو جمع کرائی۔ جس کا جائزہ لیئے بغیر یہ اقدام اٹھایا گیا۔پاکستان نے دہشت گردی کی جنگ میں کسی سے بھی زیادہ قربانیاں دی ہیں۔ عالمی برادری کو ہمیں دبانے کی بجائے ساتھ کھڑے ہونا چاہیئے انہوں نے کہا کہ پاک فوج سعودی عرب بجھوانے کے معاملے پر ارکان نے بات کی ہے پاک فوج کا وہاں کردار کیا ہوگا اس پر بریفنگ وزیر دفاع اور وزیر خارجہ سے مانگی گئی ہے تاہم ترجمان پاک فوج اس معاملے پر وضاحت دے چکے ہیں ان کا کہنا تھا کہ کمیٹی کو بتایا گیا ہے کہ 1982 کے پاکستان سعودی عرب دو طرفہ تعاون کے معاہدے کے تحت ہی فوج بھیجی جا رہی ہے۔ ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ امریکہ نے جنوبی ایشیاءکے لئے اپنی پالیسی میں امن و سلامتی کے لئے بھارت کے منفی کردار کو یکسر نظر انداز کیا یہ ناانصافی نہیں ہونی چاہیے اور امریکہ بھارت کا بھی کردار دیکھے ( صدیق ساجد)

Comments
Loading...