عمران خان کا پارٹی آئین پر نظر ثانی کا فیصلہ، ماہرین پر مشتمل کمیٹی تشکیل

لوٹ مار کرنےوالے بے نقاب ہو چکے ،انکی پراپیگنڈا مہم سے ہرگز مرعوب نہیں ہونگے،ڈٹ کر مقابلہ کرنے کےلئے تیار ہیں

پار ٹی آئین کو بنے ہوئے کافی عرصہ گزر چکا جس میں جدت لانے کےلئے کچھ ترامیم کرنا ضروری ہیں ، چیئرمین تحریک انصاف

اسلام آباد(ظفرملک)پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے پارٹی آئین پر جامع انداز میں نظر ثانی کا فیصلہ کرتے ہوئے آئینی ماہرین اور سینئر پارٹی رہنماو¿ں پر مشتمل کمیٹی تشکیل دے دی ،کمیٹی ممبران میں ڈاکٹر بابر اعوان، سردار اظہر طارق، ڈاکٹر عارف علوی، عامر محمود کیانی اور شاہد نسیم گوندل شامل ہیں ۔کمیٹی پارٹی آئین کا مفصل جائزہ لیتے ہوئے پارٹی آئین کو بہتر اور جامع بنانے کیلئے اپنی سفارشات پارٹی سربراہ کو پیش کرے گی۔تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے گزشتہ روزاس حوالے سے ہونے والے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہتحریک انصاف صحیح معنوں میں ایک جمہوری سیاسی جماعت ہے اور اس کو ادارہ بنانے کیلئے مسلسل محنت کر رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ سیا سی جماعت کی تنظیم و تشکیل کا انحصار اسکے آئینی ڈھانچے پر ہوتا ہے ۔اسی لئے تحریک انصاف کا آئینی ڈھانچہ پاکستان کی کسی بھی سیاسی جماعت سے بہتر اور جدید ہے۔ عمران خان نے کہا کہ آئینی ڈھانچے میں مزید جدت اور جامعیت ضروری ہے اور ہم سیاست میں پیش قدمی کیساتھ جماعت کے اندرونی ڈھانچے کی تعمیر سے غافل نہیں ہوں گے جبکہ آئندہ نسلوں کو بہتر پاکستان کیساتھ تحریک انصاف کی شکل میں بہترین سیاسی جماعت بھی دیں گے۔پاکستان تحریک انصاف نے مفاد عامہ کی نگرانی کیلئے کمیٹی قائم کر دی ۔پارٹی آفس سے جاری بیان کے مطابق چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کی منظوری سے 20رکنی کمیٹی کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا کمیٹی میں وکلاءسماجی کارکنان اور مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے افراد شامل ہیں ۔پارٹی ترجمان کے مطابق مفادعامہ کمیٹی عوامی مفاد سے متعلق معاملات پر نگاہ رکھے گی اور حکومت کی جانب سے عوامی مفاد کیخلاف اقدامات پر شدید ردعمل کا اظہار کرے گی جبکہ کمیٹی مفاد عامہ کی نگہبانی میں چیئرمین تحریک انصاف کی معاونت کرتے ہوئے مشورہ بھی دے گی ۔

Comments
Loading...