اسحاق ڈارکیخلاف ضمنی ریفرنس دائرکرنے کی منظوری((10نئے گواہان شامل، پیرکودائرکیاجائیگا))

چیئرمین نیب نے آمدن سے زیادہ اثاثے رکھنے پرضمنی ریفرنس دائرکرنے کی منظوری دی ،نوازشریف کیس کی سماعت کے باعث ریفرنس جمع نہیں کرایا،پیرکوپیش کیاجائیگا، نیب پراسیکیوٹر
ایک پلاٹ سابق وزیرخزانہ، ایک اہلیہ اور ایک بیٹے کے نام ہے،نجی ہاﺅسنگ سوسائٹی کے گواہ نے ڈارخاندان کے تین پلاٹس کاریکارڈ نیب کوفراہم کردیا ، تمام گواہان کے بیانات قلمبند ہوگئے
اسلام آباد(آن لائن) چیئرمین نیب جسٹس(ر)جاوید اقبال نے اسحاق ڈار کے خلاف آمدن سے زائد اثاثے رکھنے پر ضمنی ریفرنس دائر کرنے کی منظوری دے دی ہے جس میں دس نئے گواہان شامل ہیں اور ضمنی ریفرنس پیر کے روز دائر کیا جائے گا جبکہ پہلے سے زیر سماعت عبوری ریفرنس میں تمام گواہان کے بیانات قلمبند کر لئے گئے ہیں ۔ تفصیلات کے مطابق چیئرمین نیب جسٹس(ر)جاوید اقبال نے اسحاق ڈار کےخلاف آمدن سے زائد اثاثے رکھنے کے الزام میں ضمنی ریفرنس دائر کرنے کی منظوری دے دی ہے۔ ضمنی ریفرنس میں اسحاق ڈار کے خلاف دس نئے گواہان بھی شامل ہیں جبکہ ضمنی ریفرنس آئندہ پیر کو دائر کیا جائے گا۔ واضح رہے کہ اس سے قبل زیر سماعت عبوری ریفرنس میں اسحاق ڈار کے خلاف تمام 29 گواہان کے بیانات مکمل ہو چکے ہیں۔ اسحاق ڈار کیخلاف آمدن سے زائد اثاثہ جات ریفرنس میں استغاثہ کے گواہ نجی ہاو¿سنگ سوسائٹی کے پراجیکٹ ڈائریکٹر انعام اسحاق کا بیان قلمبند کر لیا گیا ، نیب پراسیکیوٹر نے ضمنی ریفرنس دائر کیلئے پیر تک کی مہلت لے لی۔اسلام آباد کی احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے اسحاق ڈار اثاثہ جات ریفرنس کی سماعت کی۔ الفلاح کوآپریٹو ہاو¿سنگ سوسائٹی کے پراجیکٹ ڈائریکٹر انعام اسحاق نے بطور گواہ اپنا بیان ریکارڈ کرایا۔ انعام اسحاق کا کہنا تھا کہ وہ 2017 میں الفلاح ہاوسنگ کے پراجیکٹ ڈائریکٹر تھے، نیب لاہور میں تفتیشی افسر کے سامنے پیش ہو کر اسحاق ڈار کے دو کنال کے پلاٹ کا ممبر شپ فارم نیب کو فراہم کیا، اسحاق ڈار فیملی کے تین پلاٹس کا ریکارڈ فراہم کیا، ایک پلاٹ اسحاق ڈار، ایک اہلیہ اور ایک بیٹے کے نام ہے، گواہان کی موجودگی میں ریکارڈ پیش کیا، سوسائٹی کے صدر کا کورنگ لیٹر نیب کو فراہم کیا۔جج محمد بشیر نے ریمارکس دیئے کہ فارم پر تو اسحاق ڈار کی جوانی کی تصویر ہے ، نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ یہ ریفرنس شروع ہونے سے پہلے کی ہے، جج اور پراسیکیوٹر کے جملوں پرعدالت میں قہقہے لگ گئے۔ نیب پراسیکیوٹر نے موقف اپنایا کہ ریفرنس تیار ہے مجاز اتھارٹی نے منظوری بھی دے دی ہے، لیکن آج نواز شریف کیس کی سماعت بھی ہے اس لیے آج جمع نہیں کرایا ، پیر کو ضمنی ریفرنس دائر کریں گے، عدالت نے مقدمے کی سماعت 26 فروری تک ملتوی کر دی۔

Comments
Loading...