افغان سیکیورٹی فورسزمیں دہشتگردوں کوشکست دینے کی صلاحیت نہیں،ترجمان پاک فوج

پاک افغان بارڈر کے دونوں اطراف صورتحال مختلف ،اب بھی افغانستان میں ایسے علاقے ہیں جودہشتگردوں کے زیراثرہیں،پاکستان 15 سال سے دہشتگردی کے خلاف جنگ لڑرہاہے،ہم دہشت گردوں کاخاتمہ کردیا

بدقسمتی سے افغانستان میں دہشت گرد اب بھی موجود ہیں ، پاکستان کے متحدہ عرب امارات اور سعودی عرب سے بہت اچھے تعلقات ہیں، ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفورکی غیرملکی خبررساں ادارے سے گفتگو

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)ڈی جی آئی ایس پی آرمیجر جنرل آصف غفور کا کہنا ہے کہ افغان سیکیورٹی فورسز میں دہشت گردوں کوشکست دینے کی صلاحیت نہیں۔ پاک افغان بارڈر کے دونوں اطراف صورتحال مختلف ہے، پاکستان 15 سال سے دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑرہا ہے، ہم نے پاکستان میں دہشت گردوں کاخاتمہ کردیا ہے، لیکن بدقسمتی سے افغانستان میں دہشت گرد اب بھی موجود ہیں اور افغان سیکیورٹی فورسز میں دہشت گردوں کو شکست دینے کی صلاحیت نہیں۔ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور نے عرب نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاک فوج نے دہشت گردوں کے ٹھکانے ختم کر دیے ہیں لیکن بدقسمتی سے افغانستان میں اب بھی دہشت گردوں کے زیر اثر علاقے موجود ہیں۔ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور کا عرب میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے کہنا تھا کہ دہشت گردی سے نمٹنے کےلئے پاک فوج بہت باصلاحیت ہے، پاکستان15سالوں سے دہشت گردی کیخلاف جنگ لڑ رہا ہے اور ہم نے دہشتگردوں کے ٹھکانے ختم کر دیئے ہیں۔ترجمان پاک فوج کا کہنا تھا کہ بدقسمتی سے پاک افغان سرحد پرافغانستان کی طرف حالات مختلف ہیں اور افغان افواج کی صلاحیت میں کمی سے اب بھی افغانستان میں ایسے علاقے ہیں جودہشتگردوں کے زیراثرہیں۔میجر جنرل آصف غفور نے کہا کہ پاکستان نے تنہا دہشت گردوں کےخلاف آپریشن میں کامیابیاں سمیٹی ہیں اور پاک افغان سرحد پر مستقل امن کیلئے افغانستان کو بھی کامیاب کوششیں کرنا ہوں گی۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات سے تاریخی اوربہترین تعلقات ہیں اور تینوں ممالک کے درمیان آپسی تعاون خطے کے مفادمیں ہے۔ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ دہشت گردوں سے کلیئرکرائے گئے علاقوں میں سعودی عرب اورمتحدہ عرب امارات نے سوشل ڈویلپمنٹ میں بہت کام کیا ہے

Comments
Loading...