پاکستان ٹیم خوش قسمت ہے کہ اس کے پاس سرفراز جیسا کپتان ہے، کیوین پیٹرسن

شارجہ: کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے جارحانہ بلے باز کیون پیٹرسن نے کہا ہے کہ پاکستان کرکٹ ٹیم خوش قسمت ہے کہ اس کے پاس سرفراز احمد جیسا کپتان ہے۔

اسلام آباد یونائیٹڈ سے فتح کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سرفراز کو ٹیم کے تمام کھلاڑی پسند کرتے ہین اور وہ کرکٹ کو بہت اچھا سمجھتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ورلڈ کپ صرف 12 ماہ دور ہے، پاکستان کرکٹ بورڈ کو چاہیے کہ وہ سرفراز کو کہیں کہ آپ ہماری ٹیم کی ورلڈ کپ میں قیادت کریں گے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ورلڈ کپ سے صرف 12 ماہ قبل آپ کپتان تبدیل نہیں کرسکتے اور اگر ایسا کیا جائے تو ٹیم کے لیے نقصان دہ ہوتا ہے۔

پیٹرسن نے کہا کہ میرا تجربہ کہتا ہے کہ کپتان کو سپورٹ کیا جائے، اس سے ٹیم کے دیگر کھلاڑی بھی محفوظ محسوس کرتے ہیں۔

’کوئٹہ کو جیتتا دیکھنا چاہتا ہوں لیکن پاکستان نہیں جاسکتا‘

پاکستان آکر کھیلنے سے متعلق سوال پر ان کا کہنا تھا کہ اس بار کوئٹہ کو جیتتا دیکھنا چاہتا ہوں لیکن پاکستان نہیں جاسکتا۔

انہوں نے کہا کہ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے پی ایس ایل کے گزشتہ تین سیزنز میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے، میرا ٹیم میں کردار نہ صرف میچ فنش کرنا بلکہ نوجوانوں کی تربیت بھی کرنا ہے۔

اس سوال پر کہ کیا وہ مزید کرکٹ کھیلنا چاہیں گے، پیٹرسن نے کہا کہ انہیں فیلڈنگ سے نفرت ہے، 20 سالوں پر محیط کریئر کے دوران انہیں کوئی بڑی انجری نہیں ہوئی اور وہ اس حوالے سے بہت خوش قسمت ہیں۔

جارحانہ بلے باز نے کہا کہ میری پوری کوشش ہے کہ کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کے مالک ندیم عمر کے لیے اس مرتبہ ٹرافی جیتوں کیوں کہ وہ بہت اچھے انسان ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ اگر آپ کی ٹیم اچھا پرفارم کررہی ہو یہی بات کافی ہے کیوں کہ حقیقت میں صرف یہی چیز معنی رکھتی ہے۔

خیال رہے کہ بدھ کھیلے گئے میچ میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے اسلام آباد یونائیٹڈ کو 6 وکٹوں سے شکست دی تھی۔

کیون پیٹرسن نے 48 رنز کی اننگز کے ساتھ اس فتح میں کلیدی کردار ادا کیا تھا۔

Comments
Loading...