Official Web

10 سال بعد ٹیسٹ کرکٹ کی واپسی، سری لنکا نے ٹیم پاکستان بھیجنے کی منظوری دیدی

شائقین کرکٹ کے لیے اچھی خبر ہے کہ سری لنکن کرکٹ بورڈ نے دسمبر میں اپنی ٹیسٹ ٹیم پاکستان بھیجنے کی منظوری دے دی ہے۔

پاکستان اور سری لنکا کی کرکٹ ٹیموں کے درمیان دسمبر میں دو ٹیسٹ میچز کی سیریز کھیلی جائے گی اور 10 برس کے بعد ٹیسٹ کرکٹ کے لیے پاکستان میں میدان آباد ہوں گے۔

2009 میں سری لنکا کرکٹ ٹیم پر لاہور میں ہونے والے افسوسناک واقعے کے بعد پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ کی سرگرمیاں معطل ہو گئی تھیں لیکن 2015 میں زمبابوے کرکٹ ٹیم نے مختصر دورانیے کی کرکٹ کے لیے پاکستان کا دورہ کیا اور اس کے بعد کئی انٹر نیشنل میچز بھی کھیلے گئے لیکن اب دسمبر میں پہلی مرتبہ ٹیسٹ سیریز کا انعقاد ہو گا۔

‏شیڈول کے مطابق ستمبر اکتوبر میں پاکستان اور سری لنکا کی ٹیموں کے درمیان ٹیسٹ سیریز کھیلی جانی تھی لیکن دونوں بورڈز کی باہمی رضا مندی کے بعد اس ٹیسٹ سیریز کو ون ڈے اور ٹی ٹوئنٹی سیریز کے ساتھ تبدیل کر دیا گیا تھا تاکہ مہمان ٹیم پہلے ون ڈے اور ٹٹی ٹوئنٹی سیریز کھیل کر پاکستان میں حالات کا جائزہ لے سکے اور دسمبر میں ٹیسٹ سیریز کا انعقاد کیا جا سکے۔

اسی پلان کے مطابق سری لنکن کرکٹ بورڈ نے پاکستان میں حالات پر اطمینان کا اظہار کیا اور دو ٹیسٹ میچز کی سیریز کے لیے ٹیم پاکستان بھیجنے کی منظوری دی ہے۔

‏پاکستان میں ایک روزہ اور ٹی ٹوئنٹی میچوں پر مشتمل سیریز کے کامیاب انعقاد کے بعد سری لنکا کرکٹ نے فیوچر ٹور پروگرام میں شامل دسمبر میں ٹیسٹ سیریز کے شیڈول کی تصدیق کی ہے۔

‏سیریز کا پہلا ٹیسٹ میچ 11 سے 15 دسمبر تک راولپنڈی کرکٹ اسٹیڈیم میں کھیلا جائے گا جب کہ دوسرا میچ 19 سے 23 دسمبر تک نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں کھیلا جائے گا، ٹیسٹ میچز آئی سی سی ٹیسٹ چیمپئین شپ کا حصہ ہوں گے۔

‏پی سی بی کے ڈائریکٹر انٹرنیشنل کرکٹ ذاکر خان کا کہنا ہے کہ یہ قومی کرکٹ کے لیے ایک شاندار خبر ہے جو اس بات کا ثبوت ہےکہ دیگر ممالک کی طرح پاکستان بھی ایک محفوظ ملک ہے۔

انہوں نے کہا کہ وہ طویل فارمیٹ کی سیریز کے لیے ٹیم پاکستان بھجوانے پر سری لنکا کرکٹ کے مشکور ہیں۔

ذاکر خان نے کہا کہ یہ سیریز ملک میں انٹرنیشنل کرکٹ کی مکمل بحالی سے متعلق پی سی بی کی کاوشوں کا نتیجہ ہے جس سے انہیں نوجوان نسل کو کھیل کی طرف راغب کرنے میں مدد ملے گی۔

‏ڈائریکٹر انٹرنیشنل کرکٹ ذاکر خان کا کہنا ہے کہ ٹیسٹ سیریز کے شیڈول کو حتمی شکل دینے کے بعد اب معیاری انتظامات کی تیاری کا آغاز کیا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پی سی بی اس سیریز کو یادگار بنانے کے لیےکرکٹرز، آفیشلز، میڈیا اور عوام کے لیے انتظامات میں کوئی کسر نہیں چھوڑے گا۔

‏سری لنکا کرکٹ کے چیف ایگزیکٹو ایشلے ڈی سلوا کا کہنا ہے کہ وہ دوبارہ پاکستان کے دورے کی تصدیق کرتے ہوئے خوشی محسوس کر رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ یقین ہے کہ پاکستان میں ٹیسٹ سیریز کے لیے کنڈیشنز سازگار ہوں گی۔

‏ایشلے ڈی سلوا نے کہا کہ وہ تمام ممالک کی ہوم سیریز ان ہی کے وطن میں کھیلنے کے حامی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ وہ پاکستان میں بین الاقومی کرکٹ کی مکمل بحالی میں اپنا کردار ادا کرنے پر مسرور ہیں۔

چیف ایگزیکٹو سری لنکا کرکٹ نے کہا کہ کرکٹ میں پاکستان کی ایک قابل فخر تاریخ رکھتا ہے، جس نے ابتدائی ایام میں سری لنکا کرکٹ کی بہت مدد کی۔

‏ایشلے ڈی سلوا نے کہا کہ سری لنکا کرکٹ ٹیم نے ورلڈٹیسٹ چیمپئن شپ میں اپنی پہلی سیریز نیوزی لینڈ کے خلاف کھیلی جو برابر رہی جب کہ پاکستان کرکٹ ٹیم آسٹریلیا سے واپسی پر سری لنکا کے مدمقابل ہو گی۔

انہوں نے کہا کہ دونوں ٹیموں کے درمیان ٹیسٹ سیریز میں سخت مقابلہ ہوگا جہاں شائقین کرکٹ کو سنسنی خیز مقابلے دیکھنے کو ملیں گے۔

Comments
Loading...