قاتل عمران عالمی پورن مافیا کا حصہ ، حکومت معاملہ دبا رہی ہے، والد زینب

تین کالم۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
قاتل عمران عالمی پورن مافیا کا حصہ ، حکومت معاملہ دبا رہی ہے، والد زینب
لاہور: کمسن زینب کے والد نے کہا ہے کہ ملزم عمران چائلڈ پورنو گرافی کے عالمی مافیا کا رکن ہے لیکن حکومت اس پہلو کو جان بوجھ کر دبا رہی ہے۔

ویب سائٹ ’عرب نیوز‘ کو ٹیلی فونک انٹرویو دیتے ہوئے زینب کے والد محمد امین انصاری نے کہا کہ زینب کا قاتل بچوں کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے گھناو¿نے جرم کا اکیلا ’بھیڑیا‘ نہیں بلکہ وہ پورنو گرافی بنانے والے عالمی مافیا کا رکن ہے اور حکومت اس کے پورن مافیا سے تعلقات کے پہلو کو جان بوجھ کر نظر انداز کررہی ہے اور عمران کو تنہا مجرم ثابت کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

محمد امین انصاری نے کہا ہے کہ ہماری محلے میں کی گئی تحقیق میں یہ انکشاف ہوا کہ ملزم چائلڈ پورنو گرافی کے اس عالمی مافیا کا رکن ہے جو بچوں سے زیادتی اور انہیں قتل کرنے کی ویڈیوز بنا کر انٹرنیشنل مارکیٹ میں فروخت کرتے ہیں۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ پنجاب حکومت ملزم کے عالمی مافیا سے تعلقات کی تفصیلات کو خفیہ رکھے ہوئے ہے اور اسے منظر عام پر نہیں لارہی جب کہ حکومت عمران کو اکیلا جنسی درندہ ثابت کرکے اس مکروہ دھندے میں ملوث پسِ پردہ لوگوں کو بچارہی ہے۔
یہ خبر بھی پڑھیں: زینب قتل کے ملزم عمران علی کا پرانا مجرمانہ ریکارڈ سامنے آگیا

دوسری جانب ترجمان پنجاب حکومت ملک احمد خان نے زینب کے والد کے الزام کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ اب تک کی ہونے والی تفتیش میں ملزم کے کسی عالمی گروہ سے رابطے کے ثبوت نہیں ملے اور تفتیش کار تاحال ملزم کے چائلڈ پورنوگرافی کے کسی بھی مافیا سے تعلقات کو ثابت نہیں کرسکے، ملزم عمران زینب کے قتل میں تنہا ملزم ہے تاہم واقعے سے متعلق مزید تحقیقات جاری ہیں۔

واضح رہے کہ قصور میں 8 سالہ بچی زینب کو اغوا اور زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کردیا گیا تھا، ملزم عمران نے بعد میں اعتراف کیا تھا کہ وہ زینب کے علاوہ بھی کئی بچیوں کو قتل کرچکا ہے

Comments
Loading...